219

میں مسلمان پہلے ہوں، انسان بعد میں-فیصل ریاض شاہد

ہم سب “عباد اللہ(اللہ کے بندے/عبد)” ہیں۔یعنی ہماری اصل حقیقت یہ ہے کہ اللہ نے ہمیں #عبد بنایا ناکہ انسان۔ یہ #انسانیت تو محض ایک لباس ہے جو ہماری عبدیت نے پہن رکھا ہے۔ میری عبدیت کو یہ لباس اللہ نے پہنایا ،وہ اگر چاہتا تو مجھے پتھر بھی بنا سکتا تھا، جانور یا درخت بھی بنا سکتا تھا، وہ اگر چاہتا تو میری عبدیت کو آگ، ہوا، پانی وغیرہ کسی بھی پیرائے میں ظاہر کر دیتا، یعنی وہ اگر چاہتا تو میری عبدیت کے اظہار کا پیرایہ/لباس بدل دیتا۔

انسانیت عبدیت کے اظہار کا محض ایک عدد پیرایہ ہے۔ انسانیت کوئی بنیادی قدر نہیں، بنیادی قدر تو عبدیت ہے۔ پس پہلے میں “عبدِ مومن” یعنی مسلمان ہوں اور بعد ازاں انسان۔ لہذا میرے نزدیک انسانیت سب سے بڑا مذہب نہیں، اسلام سب سے بڑا مذہب ہے، انسانیت تو میرے مذہب کا محض ایک جزو اور میری عبدیت کا صرف خارجی اظہار ہے!

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں